news
English

فضل حق فاروقی کی فائیور پرفارمنس نے یوگنڈا کا بسترگول کردیا

پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے افغانستان کے بلے بازوں نے بھی بڑا مجموعہ اسکور کیا تاہم فضل حق فاروقی کی پانچ وکٹیں لینے والی زبردست بولنگ نے افغانستان کو یوگنڈا کے خلاف شاندار جیت دلانےمیں اہم کردار ادا کیا۔

فضل حق فاروقی کی فائیور پرفارمنس نے یوگنڈا کا بسترگول کردیا

ٹی20 ورلڈکپ 2024 کے پانچویں میچ میں یک طرفہ مقابلے کے بعد افغانستان نے یوگنڈا کو با آسانی شکست دے دی۔ گیانا کے پروویڈینس اسٹیڈیم میں کھیلے گئے مینز ٹی20 ورلڈکپ کے پانچویں میچ میں یوگنڈا کے کپتان برائن ماسابا نے ٹاس جیت کر افغانستان کو قابل برداشت ہدف تک محدود رکھنے کی امید میں بولنگ کا فیصلہ کیا تھا۔ تاہم فضل حق فاروقی کی شاندار بولنگ اور ایک شاندار اوپننگ پارٹنرشپ نے افغانستان کو گیانا میں یوگنڈا کے خلاف 125 رنز کی زبردست فتح دلائی۔ فاروقی نے ابتدا میں ہی رونک پٹیل کو صرف 4 اور راجر مکوسا کو 0 پر یکے بعد دیگرے میدان بدر کردیا۔ اگرچہ وہ ہیٹ ٹرک سے تھوڑا پیچھے رہ گئے، کیونکہ ریاضت علی شاہ نے بمشکل اپنی وکٹ کا بچاؤ کیا، لیکن افغانستان نے جلد ہی اپنا تیسرا شکار کیا جب مجیب الرحمان نے سیمون سیسازئی کو 4 رنز پر پویلین واپس بھیجا۔ 
افغان بولنگ کے اس حملے میں شامل ہونے والے تیسرے بولر، نوین الحق نے اپنے پہلے اوور میں دو وکٹیں حاصل کیں اور یوگنڈا کوصرف 18 رنز پر پانچ کھلاڑی ائوٹ کرکے نازک صورتحال میں ڈال دیا۔ ریاضت علی اور رابنسن اوبویا کے درمیان مختصر پارٹنرشپ نے کچھ مزاحمت فراہم کی، لیکن فاروقی نے میچ میں واپسی کرتے ہوئے یوگنڈا کی اننگز کو مزید تباہی سے دوچارکردیا۔ انہوں نے 5/9 کی شاندار کارکردگی کے ساتھ میچ ختم کیا، جس کے بعد کپتان راشد خان نے میچ پر فتح کی مہرلگا دی۔ فاروقی کی شاندار کارکردگی نے انہیں میچ کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ دلایا، ان کے اعدادوشمار مردوں کےٹی 20 ورلڈ کپ کی تاریخ میں چوتھی بہترین کارکردگی کے طور پر شمار ہوئے۔ 
اس سے قبل یوگنڈا کے کپتان برائن ماسابا نے ٹاس جیت کر بولنگ کا فیصلہ کیا، تاکہ افغانستان کو قابل برداشت ہدف تک محدود رکھا جا سکے۔ افغانستان کے اوپنرز نے سازگار بیٹنگ حالات کا فائدہ اٹھاتے ہوئے شاندار آغاز کیا۔ رحمان اللہ گرباز نے ابتدا میں ٹیم کی قیادت کی اور جلد ہی ابراہیم زدران نے بھی چار مسلسل چوکے لگا کر ان کا ساتھ دیا۔ افغانستان نے پاور پلے کا اختتام 11 رنز فی اوور کی شرح سے کیا۔ گرباز اور زدران نے اپنی جارحانہ بیٹنگ جاری رکھی، جس سے یوگنڈا کے بولرز کے لیے انہیں روکنا مشکل ہوگیا۔ گرباز نے نویں اوور میں اپنی پہلی ٹی 20 ورلڈ کپ نصف سنچری مکمل کی، جس میں انہوں نے چار چھکے اور دو چوکے لگائے تھے۔ دسویں اوور تک، افغانستان 100 رنز سے زیادہ بنا چکا تھا۔ بلال شاہ کے ایک 25 رنز کے اوور، جس میں پانچ نوبالز اور پانچ وائیڈز شامل تھیں، نے افغانستان کو 150 سے زیادہ کے اسکور پر پہنچا دیا۔ 
یوگنڈا نے آخر کار بریک تھرو کیا جب ماسابا نے زدران کو آؤٹ کیا۔ تجربہ کار بولر الپیش رامجانی اور ماسابا نے پھر دو مزید وکٹیں حاصل کیں، جس سے افغانستان کی اسکورنگ کی رفتار کو کم کیا۔ یوگنڈا کی آخری اوورز میں کوششوں کے باوجود، صرف 22 رنز کے عوض تین وکٹیں لینے کے باوجود، افغانستان پہلے ہی ایک مضبوط ہدف قائم کر چکا تھا جو یوگنڈا کے لیے حاصل کرنا مشکل ثابت ہوا اور میچ میں فتح افغانستان کے حصے میں آئی۔