English

سٹے بازی کی کمپنی سے معاہدہ، راشد شدید برہم

سابق کپتان نے پی سی بی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کردیا

فوٹو: اے ایف پی

پی ایس ایل 5کے دوران آن لائن سٹے بازی کمپنی سے معاہدے پر راشد لطیف شدید برہم ہیں، سابق کپتان نے پی سی بی کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کردیا، سابق کپتان کا کہنا ہے کہ دیگر ملکوں میں یہ معمول کی بات مگر  پاکستان میں قطعی طور پر قابل قبول نہیں، اسٹیک ہولڈرز حکومت سے مداخلت  کیلیے کہیں۔

تفصیلات کے مطابق ’’ایکسپریس‘‘ کے اسپورٹس ایڈیٹر سلیم خالق نے گذشتہ دنوں رپورٹ دی تھی کہ پی ایس ایل میچز پر پاکستان سے باہر قانونی سٹے بازی کیلیے پی سی بی نے ایک کمپنی سے معاہدہ کیا جس کے تحت اسے لائیو اسٹریمنگ کی بھی اجازت تھی، پی سی بی نے بھی تصدیق کی تھی کہ کمرشل رائٹس ہولڈر کمپنی نے آگے ڈیل کی، مگر یہ صرف ان ملکوں میں آن لائن سٹہ ہوا جہاں اسے قانونی حیثیت حاصل تھی، اپنے یوٹیوب چینل پر رد عمل میں سابق کپتان راشد لطیف نے کہاکہ دیگر ملکوں میں فٹبال سمیت میچز پر جوا معمول کی بات ہے مگر پاکستان میں یہ قطعی طور پر قابل قبول نہیں، پی سی بی کا اس میں کسی بھی طور ملوث ہونا غیر قانونی ہے اور اس کیخلاف ایکشن لینا چاہیے۔

کورونا وائرس کی وجہ سے اس وقت مشکل صورتحال ہے لیکن آئندہ اس طرح کی غلطی نہیں دہرائی جانا چاہیے۔ انھوں نے کہا کہ پی ایس ایل کے اسٹیک ہولڈرز بھی اس کا نوٹس لیتے ہوئے حکومت پاکستان سے مداخلت کی درخواست کریں، کسی بھی نوعیت میں کرپشن کرکٹ کیلیے تباہ کن ثابت ہوسکتی ہے۔یاد رہے کہ بالواسطہ معاہدہ کرنے والی کمپنی نے لائیو اسٹریم ہونے والے پی ایس ایل کے میچز پر انگلینڈ سمیت کئی ملکوں میں قانونی آن لائن سٹے بازی کرائی تھی۔