English

قومی خواتین کرکٹ ٹیم کے دورہ زمبابوے سے متعلق اپ ڈیٹ جاری

ابتدائی طور پر قومی خواتین کرکٹ ٹیم کو 21 فروری کو زمبابوے سے وطن واپس لوٹنا تھا

قومی خواتین کرکٹ ٹیم کے دورہ زمبابوے سے متعلق اپ ڈیٹ جاری فوٹو: پی سی بی

پاکستان کرکٹ بورڈ اور زمبابوے کرکٹ نے متفقہ فیصلے کے بعد پاکستان ویمنز کرکٹ ٹیم کا دورہ زمبابوے ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ دونوں بورڈز نے یہ مشترکہ فیصلہ ایمریٹس ایئرلائنز کی جانب سے جاری کردہ تازہ ترین سفری پالیسی کے اجراء کے بعد کیا ہے۔ ایمریٹس ایئر لائنز پاکستان ویمنز کرکٹ ٹیم کی آفیشل ایئرلائن ہے۔

ابتدائی طور پر قومی خواتین کرکٹ ٹیم کو 21 فروری کو زمبابوے سے وطن واپس لوٹنا تھا۔ دونوں ممالک کی خواتین کرکٹ ٹیموں کے مابین سیریز کا پہلا میچ 9 فروری کو ہرارے میں کھیلا گیا تھا۔ سیریز کا دوسرا میچ 12 فروری بروز جمعے کو کھیلا جانا تھا۔ 

تاہم تازہ ترین سفری پالیسی کے تحت ایمریٹس ایئرلائنز  نے 13 سے 28 فروری تک ہرارے سے دبئی تک اپنا فلائیٹ آپریشن معطل کردیا ہے، جس کے بعد دونوں بورڈز کے اعلیٰ عہدیداران نے تبادلہ خیال کرتے ہوئے مشترکہ فیصلہ کیا ہے کہ پاکستان خواتین کرکٹ ٹیم 12 فروری کو ہرارے سے وطن واپس روانہ ہوجائے گی۔

وسیم خان، چیف ایگزیکٹو پی سی بی:

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان نے کہا کہ زمبابوے کرکٹ بورڈ کی جانب سے  پاکستان ویمنز کرکٹ ٹیم کے لیے کیے گئے خصوصی انتظامات کے بعد ہمارے لیے دورہ ختم کرنے کا یہ فیصلہ کرنا مشکل تھا تاہم ایمریٹس کی جانب سے 13 سے 28 فروری تک ہرارے سے دبئی کے لیے اپنا فلائیٹ آپریشن معطل کرنے کے فیصلے کے بعد ہمیں اگلے 24 گھنٹے کے اندر اپنی ٹیم کو وہاں سے وطن واپس لانا تھا۔

وسیم خان نے کہا کہ ہم اس موقع پر تعاون کرنے اور صورتحال کو سمجھنے پر زمبابوے کرکٹ کے مشکور ہیں، پرامید ہیں کہ ہم اب کسی موقع پر اس اضافی دورے کو ضرور مکمل کریں گے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کو فیوچر ٹور پروگرام کے تحت اپریل میں زمبابوے کا دورہ کرنا ہے۔ 2 ٹیسٹ اور 3 ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل میچز پر مشتمل  یہ سیریز ابھی تک اپنے ابتدائی پلان کے مطابق شیڈول ہے تاہم پی سی بی اس دوران کوویڈ 19 کی صورتحال اور فلائیٹ آپریشن کا مسلسل جائزہ لیتا رہے گا۔ قومی کرکٹ ٹیم کو 17 اپریل کو بلائیو روانہ ہونا ہے۔