news
English

عثمان خواجہ نے پاکستان کے خلاف میچ میں بیٹیوں کے نام والے جوتے پہن لیے

جوتوں کی ایک کلوز اپ تصویر میں عثمان خواجہ کی بیٹیوں عائشہ اور عائلہ کے نام دکھائے گئے۔

عثمان خواجہ نے پاکستان کے خلاف میچ میں بیٹیوں کے نام والے جوتے پہن لیے

آسٹریلوی کرکٹر عثمان خواجہ نے پاکستان کیخلاف باکسنگ ڈے ٹیسٹ میں اپنی بیٹیوں کے نام والے جوتے پہن لیے۔ میلبورن میں دوسرے ٹیسٹ کے پہلے دن کے دوران آسٹریلیا کے اوپننگ بیٹر کے جوتوں کی تصویر میں ان کی بیٹیوں عائشہ اور عائلہ کے نام ٹیپ کیے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں۔ 
تفصیلات کے مطابق غزہ میں اسرائیلی جارحیت کے نتیجے میں انسانی بحران کے حوالے سے کسی بھی چیز کی نمائش پر پابندی کے بعد عثمان خواجہ نے منگل کے روز پاکستان کے خلاف بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی بیٹیوں کے ناموں والے جوتے پہنے۔
اے ایف پی کی جاری کردہ کھلاڑی کے جوتوں کی ایک کلوز اپ تصویر میں عثمان خواجہ کی بیٹیوں عائشہ اور عائلہ کے نام دکھائے گئے جو میلبورن میں دوسرے ٹیسٹ کے پہلے دن کے دوران ان کے جوتے کے اطراف ٹیپ کیے گئے تھے۔ 
عثمان خواجہ کو انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے میچ کے دوران یکجہتی پر مبنی اسٹیکر لگانے کی اجازت دینے سے انکار کردیا تھا جس میں ایک سیاہ کبوتر دکھایا گیا تھا۔ 
عثمان خواجہ کو اس سے قبل پرتھ میں پہلے ٹیسٹ کے دوران ہاتھ سے لکھے ہوئے نعرے "آزادی ایک انسانی حق ہے" اور "تمام زندگیاں برابر ہیں" کے پیغام والے جوتے پہننے سے روک دیا گیا تھا۔ آئی سی سی نے کہا کہ انہوں نے سیاست مذہب یا نسل سے متعلق پیغامات پر کونسل کے قوانین کی خلاف ورزی کی ہے جبکہ عثمان خواجہ نے پیر کے روز ایک انسٹاگرام پیغام پوسٹ کیا جس میں بظاہر مایوسی کا اظہار کیا گیا۔ 
انہوں نے کہا کہ جب میں معصوم بچوں کو مرتے ہوئے دیکھتا ہوں تو ان کی ویڈیوز مجھے سب سے زیادہ متاثر کرتی ہیں۔ 
"میں صرف اپنی بیٹیوں کو اپنی بانہوں میں تصور کرتا ہوں، میں اس کے بارے میں دوبارہ بات کرتے ہوئے جذباتی ہوجاتا ہوں۔ میرے پاس کوئی پوشیدہ ایجنڈا نہیں ہے۔"