news
English

عثمان قادر نے شاداب خان کی سلیکشن کو غیرمتنازع قرار دے دیا

عثمان قادر نے میرٹ پر مبنی کرکٹ کے لیے اپنی لگن کی تصدیق کرتے ہوئے انتخاب کے معیار کے بارے میں کسی بھی تنازع کو مسترد کر دیا۔

عثمان قادر نے شاداب خان کی سلیکشن کو غیرمتنازع قرار دے دیا

اسپنرعثمان قادر قومی ٹیم میں واپسی کے لیے بے تاب ہیں، انہوں نے وائٹ بال کرکٹ اور ٹیسٹ میچ دونوں کھیلنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔
پاکستان کے لیے 25 ٹی 20 اور صرف ایک ون ڈے میں نظر آنے والے، عثمان قادر کا آخری میچ اکتوبر 2022 میں بنگلہ دیش کے خلاف تھا، جس کے بعد انھیں انگلینڈ کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز کے دوران چوٹ لگنے کی وجہ سے بریک کا سامنا کرنا پڑا۔ 
منگل کےروز کراچی میں ایک روزہ پریکٹس میچ میں حصہ لینے کے بعد عثمان قادر نے قومی ڈیوٹی پر واپسی کا ارادہ ظاہر کیا۔ 
عثمان قادر نے اپنی صلاحیتوں کو نکھارنے کے لیے فرسٹ کلاس کرکٹ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے تمام فارمیٹس میں اپنا حصہ ڈالنے کی تیاری پر زور دیا۔ 
عثمان قادر نے میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ "[فٹنس] کیمپ واقعی چل رہا ہے اور لڑکے سخت محنت کر رہے ہیں۔ ڈومیسٹک سیزن میں میری کارکردگی اچھی رہی، میں انٹرا اسکواڈ میچز سے لطف اندوز ہو رہا ہوں۔" 
ان کا کہنا تھا کہ "میں ٹیسٹ کے ساتھ ساتھ وائٹ بال کی کرکٹ بھی کھیلنا چاہتا ہوں، فرسٹ کلاس [کرکٹ] میں کھیلنا مددگار ثابت ہوگا اور میرا کام ہے کہ مجھے جہاں بھی موقع ملے پرفارم کرنا ہے۔" 
عثمان قادر پریکٹس سیشن کے دوران اپنی بلے بازی کی صلاحیت کو بہتر بنانے پر بھی توجہ دے رہے ہیں، خاص طور پر پاور ہٹنگ میں ان کا کہنا تھا کہ ٹی 20 میں جارحانہ مزاج کے بلے باز ہی بہتر رہتے ہیں۔ 
عثمان قادر نے مزید کہا کہ میں نیٹ میں بلے سے پریکٹس کر رہا ہوں، میری توجہ پاور ہٹنگ پر ہے۔ میں ہمیشہ کارکردگی دکھانے کی پوری کوشش کرتا ہوں اور باقی معامنلات اللہ تعالیٰ کے ہاتھ میں چھوڑتا ہوں۔’’ 
ان کا کہنا تھا کہ “مجھے آسٹریلیا چھوڑنے کا کوئی افسوس نہیں، پاکستان کی نمائندگی کرنا قابل فخر لمحہ ہے۔ میں صرف اپنے والد [پاکستان کے مایہ ناز اسپنرعبدالقادر] کے سامنے فخر سے سربلند کرنا چاہتا ہوں۔’’ 
انہوں نے میرٹ کی بنیاد پر کرکٹ کے لیے اپنی لگن کی تصدیق کرتے ہوئے انتخاب کے معیار کے بارے میں کسی بھی تنازع کو مستردکرتے ہوئے کہا کہ "یہ کہنا میرا کام نہیں ہے کہ شاداب [خان] نے پرفارم نہیں کیا۔ آپ جو بھی کھلاڑی پسند نہیں کرتے، آپ کہتے ہیں کہ وہ دوستی کوٹے پر کھیل رہا ہے، میرا نہیں خیال کہ حقیقت میں ایسا کچھ ہے۔’’